سب سے بڑی نشریاتی ادارے

نیویارک امریکا کے سب سے بڑی نشریاتی ادارے سی بی ایس نے بتایا ہے کہ نیویارکر میگزین میں ادارے کے چیئرمین لیسلی مونفیر کے جنسی اسکینڈل کے حوالے سے شائع ہونے والے ایک مضمون کے بعد مونفیر کو عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔قبل ازیں چھ خواتین نے 68 سالہ مونفیر پر گذشتہ جولائی میں جنسی ہراسانی کا الزام عائد کیا تھا۔
مونفیر 15 سال سے سی بی ایس نیوز نیٹ ورک کے چیئرمین بورڈ آف ڈائریکٹر کے عہدے پر تعینات رہے ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق جریدہ نیویارکر میں ایک مضمون شائع ہوا جس میں مزید چھ خواتین نے مونفیر پر جنسی ہراسانی کا سنگین الزام عاید کیا تاہم لسلی مونفیر ان الزامات کو مسترد کرتے ہیں۔درایں اثناء سی بی ایس نے ریڈسٹون فیملی کے ساتھ جاری اختلافات ختم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

ریڈ سٹون خاندان جس کے سی بی ایس میں 80 فی صد شیرز ہیںسی بی ایس کوفیاکوم نامی ابلاغی ادارے میں مدغم کرنا چاہتا ہے۔تاہم ریڈسٹون خاندان کا کہنا تھاکہ وہ سی بی ایس کو فیاکوم میں مدغم کرنے کے کسی پلان پر غور نہیں کررہے ہیں۔ ان کا کہناتھا کہ کم سے کم دو سال تک وہ ایسی کسی تجویز پرعمل درآمد نہیں کرسکتے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ اخبارات سے یہ اطلاعات ملی ہیں مونفیر کی رخصتی کا فیصلہ کرنے کے ساتھ سی بی ایس اور ریڈ سٹون خاندان کے درمیان اختلافات بھی ختم کردیے گئے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں